107

مریدکے:جادوئی طاقت کے حصول کےلئے اپنے ہی ماں باپ کو قتل کردیا، ہوشربا حقیقت منظر عام پر

جادوئی طاقت کے حصول کےلئے اپنے ہی ماں باپ کو قتل کردیا، ہوشربا حقیقت منظر عام پر
کئی سال گزرجانے کے بعد بھی صرف 5 مرلہ کے پلاٹ کی خاطر باپ کا بہیمانہ قتل کرنے والا سفاک قاتل قانون کی گرفت سے آزاد،قانون خاموش تماشائی۔ تفصیلات کے مطابق ضلع شیخوپورہ کے شہر مریدکے کے رہائشی مسعود شاہ نے چند برس قبل چند دوستوں کے ہمراہ اپنے ہی باپ کو بہیمانہ طریقہ سے قتل کرکے باپ کی قبر کو بھی جنگلا لگا کر تالا لگا دیا تھاکہ مقتول کی لاش کا پوسٹمارٹم بھی نہ کیا جا سکے،قاتل نے نہائت اپنے اثرو رسوخ کو استعمال کرتے ہوئے ایف آ ئی آر پر کار روائی ہی رکوادی، قاتل نے اپنی سگی ماں اور دو بھائیوں پر بھی قاتلانہ حملہ کرایا،جس پر دونوں بھائی ماں کی جان بچانے کیلئے شہر چھوڑ کر کہیں اور چلے گئے، دونوں بھائیوں نے سوشل میڈیا کے ذریعے کئی مرتبہ مدد حاصل کرنے کی کوشش کی تاہم ملزم کے اثرورسوخ کے سامنے ان کی ہر کوشش بے سود رہی۔اس سفاک قاتل کے بھائی خضر حیدر کے مطابق مریدکے کے معروف شاعر مرحوم نقش ہاشمی کے نواسے مسعود شاہ نے پراپرٹی کے لالچ اور شیطانی سفلی علوم کے حصول کیلئے اپنے ہی باپ اور پھر اپنی ماں کو شیطانی جبلت کی بھینٹ چڑھادیا ،اس سفاک شخص نے آسٹریلیا کے جزیرے فیجی سے سفلی علوم حاصل کیئے جسے جادو نگری بھی کہا جاتا ہے، اس مقصد کے حصول کیلئے اس نے فیجی میں شادی بھی کی،ایک روز اس مخبوط الحواس شخص نے اپنی ہی بیٹی کی آنکھ پھوڑ ڈالی،جس پر اس کی بیوی بچوں سمیت اسے چھوڑ کر چلی گئی، سب سے بڑی شیطانی طاقت کے حصول کیلئے جادو گر نے دو انسانوں کی بھینٹ مانگی، جنہیں جادو ئی عمل سے ہی مارا جانا تھا،اس کی شیطانی کھوپڑی نے اپنے باپ اور ماں کی جان لینے کا فیصلہ کیا۔باپ کی موت سے پہلے اسے تمام پراپرٹی پر قبضہ کر نا بھی ضروری تھا،اس مقصد کیلئے اس نے باپ کو بے ہوشی کی ادویات دینا شروع کیں جو پہلے ہی دل کے عارضے میں مبتلا تھا، بیہوشی کے عالم میں باپ کے تھمب امپریشنز لئے ،پراپرٹی کی جعلی دستاویز تیار کروائیںاور اپنے ایک ڈاکٹر دوست کیساتھ مل کر باپ کو مارنے کا پروگرام بنایا لیکن دوسرے بیٹوں نے ہسپتال پہنچ کر باپ کی جان بچانے کی کوشش شروع کردی جو کامیاب ہوئی اور باپ نے آنکھیں کھول دیں، یہ صورت حال اس سفاک قاتل کیلئے خطرناک تھی وہ باپ کے بچ جانے کی صورت میں خود کو جیل کی سلاخوں کے پیچھے دیکھ رہا تھا،لہٰذا وہ رات کے اندھیرے میں گنگا رام ہسپتا ل سے بیمار باپ کو اٹھا کر بھاگ نکلا حالانکہ ڈاکٹر ز نے ڈسچارج کرنے سے انکار کردیا تھا، اگلے ہی روز سفاک، درندہ صفت بھیڑیے نے گھر میں گلا دبا کر اپنے باپ کی جان لے لی،اور پوسٹ مارٹم کے اندیشے کے پیش نظر قبر کے ارد گرد چار دیواری کھڑی کرکے تالا لگا دیا، اپنے اثرو رسوخ اور جادوئی طاقت کے بوطے پر اس نے اپنی ماں اور بھائیوں کی اجیرن کرکے رکھدی،بالآخر وہ بذریعہ عملیات اپنی ماں کی جان لینے میں بھی کامیاب ہوگیا،اس ظالم شخص کے مظلوم بھائی آج بھی اس سے چھپتے پھر رہے ہیں، سیکرٹ نیوز نے انہیں انصاف دلانے کی یقین دہانی پر ان سے سارا سچ اگلوایا تاکہ سوشل میڈیا پر وائرل کرکے سفاک قاتل کے خلاف کارروائی کا کوئی رستہ نکالا جا سکے۔

آ گے پڑھیں

باپ کے قتل کی لرزہ خیز واردات کیسے انجام پاءی

ماں کو قتل کرنے کی تیسری کوشش کیسے کامیاب ہوءی

باپ کے قتل کے حوالے سے ہسپتال کی منہ بولتی دستاویزات

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں